April 24, 2024

Warning: sprintf(): Too few arguments in /www/wwwroot/esperanzaazteca.com/wp-content/themes/chromenews/lib/breadcrumb-trail/inc/breadcrumbs.php on line 253

بدھ کی صبح ۱۱؍ بجے کنیڈا کی پولیس کو اس واردات کی اطلاع موصول ہوئی۔ گھر کے ۶؍ افراد مردہ حالت میں پائے گئے جبکہ ساتواں شخص شدید زخمی تھا جسے فوری طور پر اسپتال داخل کیا گیا۔ اس معاملے میں پولیس نے ایک مشتبہ شخص کو گرفتار کرلیا ہے۔

The house where 6 people were found dead. Photo: X

وہ گھر جہاں ۶؍ افراد مردہ حالت میں پائے گئے۔ تصویر: ایکس

کنیڈا کے دارالحکومت اوٹاوا میں پولیس نے جمعرات کو شہر کے جنوبی حصے میں ایک گھر میں پائے گئے چار بچوں اور دو بالغوں سمیت چھ افراد کی موت کی تحقیقات میں ایک شخص کو گرفتار کیا گیا ہے۔ اس واردات میں گھر کا ساتواں شخص سنگین حالت میں ملا جسے فوری طور پر اسپتال داخل کیا گیا ہے۔ بدھ کو صبح ۱۱؍ بجے پولیس کو اس واردات کی اطلاع فون پر موصول ہوئی تھی۔ 
اس کے بعد ایک مشتبہ شخص کو فوری طور پر گرفتار کیا گیا ہے۔ پولیس نے کہا ہے کہ عوامی تحفظ کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ تاہم، اب تک یہ اعلان نہیں کیا گیا کہ متاثرین کی موت کیسے ہوئی۔
اوٹاوا پولیس چیف ایرک اسٹبس نے مقامی ریڈیو اسٹیشنوں کو بتایا کہ پولیس کو یقین نہیں ہے کہ یہ اموات گھریلو یا قریبی ساتھی کے تشدد کا نتیجہ ہیں۔ تاہم، انہوں نے کہا کہ وہ اب بھی مشتبہ اور متاثرین کے درمیان تعلق کا تعین کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔اسٹبس نے کہا کہ یہ ایک ’’انتہائی المناک منظر‘‘ تھا۔ اب تک نہ ہی متوفی کی شناخت ہوئی ہے اور نہ ہی اسپتال میں داخل شخص کی عمر وغیرہ کے بارے میں کچھ بتایا گیا ہے۔ 
پولیس نے کہا کہ تفتیشی ٹیمیں جائے وقوع پر موجود ہیں اور اس واردات سے منسلک اگر کسی شخص کو کوئی معلومات ہے تو اسے فوری طور پر پولیس سے رجوع کرنے کیلئے کہا ہے۔ 
جمعرات کی صبح پانچ پولیس کاریں سڑک پر اور گھر کے قریب ڈرائیو ویز میں کھڑی تھیں، جو اینٹوں کے ٹاؤن ہاؤسیز کی قطار کی درمیانی اکائی ہے۔ محلے ایک شخص احمد سعید نے بتایا کہ ’’صبح کے وقت لوگ باگ اپنی ورزش یا روزمرہ کے کاموں میں مصروف تھے۔ مَیں اپنے بیٹے کو اسکول لے جا رہا تھا، تبھی اس واردات کی خبر ملی۔ یہ پورے محلے کیلئے ناقابل یقین ہے۔‘‘ 
اوٹاوا کے میئر مارک سوٹکلف نے اس خبر کو محلے کے باشندوں کیلئے پریشان کن قرار دیا ہے۔مارک نے ایکس پوسٹ میں کہا کہ ’’بارہاوین میں ایک سے زیادہ قتل عام کے بارے میں جان کر مجھے بہت صدمہ پہنچا، جو ہمارے شہر کی تاریخ میں تشدد کے سب سے حیران کن واقعات میں سے ایک ہے۔ ہمیں ایک محفوظ کمیونٹی میں رہنے پر فخر ہے لیکن یہ خبر پریشان کن ہے۔‘‘
پولیس اس معاملے کی تفتیش کررہی ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *